Hassan Bukhari

دور کہکشاوں کی

دور کہکشاوں کی
گرد جو بکھرتی ہے
اس گرد کے ہر ذرے میں
میرے فانی بدن کے جوھر ہیں

گہری خلاؤں کی
ویراں اداسیوں میں
جو روشنی ابھرتی ہے
وہ وسعتوں کے گوھر ہیں

یہ جو میرا تجھ سے لگاؤ ہے
ایک اولین نگاہ کا گھاؤ ہے
اس لگاؤ کے ہر حاشیے میں
جو دمکتے ہیں، لو دیتے ہیں،
حرارت بخش ہیں۔۔۔
میری فیضِ ذات کے گوھر ہیں۔