Hassan Bukhari

دلِ وحشی کو رام کر

دلِ وحشی کو رام کر
اور وہی ان کہی عام کر
جو کہنا ہے ، کہ ہی دے آخر
نہ رکھ کلیجہ تھام کر
اس بار تا آخری رمق جاں نکال
کوئی تو مکمل کام کر
جو تو ھو تو خزاں کے چاند کو
اس سال روک لوں بام پر
جاری کر طریقِ مرشد حسن
پابجولاں رقصِ عام کر۔۔۔